نقیب اللہ قتل کیس میں اہم پیشرفت، قبائلی نوجوان کو مارنے والی ٹیم میں شامل سابق ڈی ایس پی قمر احمدگرفتار

 
0
396

xکراچی فروری 20(ٹی این ایس)نقیب اللہ قتل کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے، پولیس نے راؤ انوار کے قریبی ساتھی اور قبائلی نوجوان کو مارنے والی ٹیم میں شامل سابق ڈی ایس پی قمر احمد کو گرفتار کرلیاہے۔ سابق ایس ایس پی ملیر کے 100 مبینہ پولیس مقابلوں کی تحقیقات بھی شروع کردی گئی ہیں۔ذرائع کے مطابق نقیب اللہ قتل کیس میں سی ٹی ڈی نے ڈی ایس پی قمر کو بیان کے لئے طلب کیا تھا، جہاں پر انہیں راؤ انوار سے تعلق اور شاہ لطیف مبینہ پولیس مقابلے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا۔ قمر احمد معطل ایس ایس پی ملیر کے قریبی ساتھی اور ان کی ٹیم کا اہم حصہ ہے، انہوں نے بطور ڈی ایس پی راؤ انوار کے ماتحت مختلف ڈویژن میں بھی کام کیا ہے۔دوسری جانب سابق ایس ایس پی ملیر راؤانوار کے گرد گھیرا مزید تنگ کردیا گیا ہے اور راؤ انوار کے 100 مبینہ پولیس مقابلوں کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق تحقیقات کے لئے سوالنامہ تیار کرلیا گیا ہے۔ تحقیقاتی کمیٹی نے 2 رابطہ کاروں کے بیان بھی قلم بند کرلئے ہیں۔سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کے موبائل کا مکمل ریکارڈ حاصل کرلیا گیاہے۔ ایس پی انویسٹی گیشن ملک الطاف کا بیان بھی ریکارڈ کرلیا گیا ہے۔ سی ٹی ڈی کے مطابق ملک الطاف نے مبینہ مقابلوں کی تفتیش نہیں کی اور تحقیقاتی فائلوں میں ہیر پھیر کی۔