ٹھٹھہ سندھ بھر میں نمایاں حیثیت رکھتا ہے اس کی ایک قدیمی تاریخ ہے اس شہر کو باب الاسلام کا لقب بھی حاصل ہے لیکن افسوس کہ کراچی و ملک کے دیگر علاقوں سے آنے والے سیاحوں کو جو تفریحی کی سہولیات ملنی چاہیے وہ نہیں ہیں، ڈویژنل کمشنر حیدرآباد

43
980

ٹھٹھہ نومبر 03 (ٹی این ایس): ڈویژنل کمشنر حیدرآباد محمد عباس بلوچ نے کہا ہے کہ ٹھٹھہ سندھ بھر میں نمایاں حیثیت رکھتا ہے اس کی ایک قدیمی تاریخ ہے اس شہر کو باب الاسلام کا لقب بھی حاصل ہے لیکن افسوس کہ کراچی و ملک کے دیگر علاقوں سے آنے والے سیاحوں کو جو تفریحی کی سہولیات ملنی چاہیے وہ نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹھٹھہ غریب نہیں بلکہ معدنی و دیگر وسائل سے مالا مال ہونے کے باعث یہ شہر شاہوکار ہے اس شہر کی بہتری کیہلئے سچائی، نیک نتی اور سنجیدگی سے توجہ دینے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹھٹھہ ماضی میں تعلیم یافتہ لوگوں کا شہر رہا ہے یہاں کے لوگ محبت کرنے والے اور امن پسند ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں سے غربت ختم کرنے کیلئے تعلیم کی بہتری کیلئے مؤثر اقدامات کی ضرورت ہے۔ اگر یہاں سے غربت ختم کرنی ہے تو تعلیم کے فروغ کیلئے سب سے زیادہ اہمیت دینی ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار آج انہوں نے دربار ہال مکلی میں ٹھٹھہ کے مسائل کے حل اور چیلنجز سے نمٹنے کیلئے ایک اعلی سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ ڈویزنل کمشنر نے کہا کہ آج کے اجلاس کا مقصد ٹھٹھہ شہر کی خوبصورتی کی بحالی اور بہتری لانے کیلئے ہم سب کو ملکر کوششیں کرنی ہوں گی۔ انہوں نے کہا کہ میں امید کرتا ہوں کہ ہم اور یہاں موجود سب دوست ٹھٹھہ شہر کی بہتری کیلئے عملی کام کرنا چاہتے ہیں اس ضلع کے جو بھی مسائل ہیں وہ یہاں کے منتخب نمائندے اور ضلعی انتظامیہ سے ملکر حل کروائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کا اہم مسئلہ گٹکہ ہے جس کے خاتمے کیلئے ایک جامع منصوبہ تشکیل دیکر اس پر کام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ یہاں کے نوجوانوں اور آئندہ نسلوں کو اس ناسور سے نجات دلاکر ان کی زندگیاں محفوظ بنائی جا سکیں۔ انہوں نے ڈپٹی کمشنر ٹھٹھہ محمد نواز سوہو کو ہدایت کی کہ اس ضمن میں میڈیکل کیمپس لگاکر گٹکہ استعمال کرنے والے لوگوں کی ٹیسٹیں کروائی جائیں اور سول اسپتال میں ایک وارڈ قائم کیا جائے تاکہ ان کا علاج و معالج کیا جا سکے۔ اس حوالے سے انہوں نے یقین دلایا کہ وارڈ کے قیام کے متعلق ہر قسم کا تعاون کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے یہ ٹھٹھہ میں ایک میڈیکل کالج قائم کیا جائے اس کے متعلق اعلی حکام سے بات چیت جاری ہے اور جلد یہاں کے منتخب نمائندے باالخصوص ایم پی اے سید ریاض شاہ شیرازی کی کاوشوں سے میڈیکل کالج کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔ انہوں نے ڈپٹی کمشنر کو یہ بھی ہدایت کی کہ صفائی مہم کا بھی آغاز کیا جائے تاکہ یہاں کے عوام کو صاف ستھرا اور خوشکوار ماحول فراہم ہو سکے۔ قبل ازیں ڈپٹی کمشنر ٹھٹھہ محمد نواز سوہو نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹھٹھہ کے مستقبل کو تبدیل کرنے کیلئے یہ اجلاس منعقد کیا گیا ہے ہمارا ایمان ہے اور ہمیں موقع ملا ہے جوکہ اپنی صحتمند زندگی میں ہی ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ انسان جس کام کیلئے بھی کوشش کرتا ہے اللہ تعالی اس کام میں کامیاب کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب چین ملک نشے میں دھت ہوکر نیند میں سویا ہوا تھا تب ٹھٹھہ جاگ رہا تھا اور یہاں تقریبن چار سو سے زائد یونیورسٹیاں اور تعلیمی ادارے قائم تھے یہی سبب ہے کہ محمد بن قاسم بھی یہاں آئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ٹھٹھہ کی ثقافت کو اجاگر کرنے کیلئے ثقافتی میلہ منعقد کیا جائے گا جبکہ کینجھر بھی اس ضلع کا ایک بہت بڑا اثاثہ ہے اس پر تاجر برادری کو کام کرنا چاہیے تاکہ سیاحتی مرکز کو مزید بہتر بناکر مؤثر آمدنی کا ذریعہ بنایا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں سے نکنے والے معدنی وسائل کی آمدنی یہاں کے لوگوں پر ہی خرچ ہونی چاہیے۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ یہ اس ضلع کی بدقسمتی ہے کہ گٹکہ کے باعث کراچی کے اسپتالوں میں داخل 60 فیصد کینسر کے مریض اس ضلع سے تعلق رکھتے ہیں۔ انہوں نے یہاں کے لوگوں کو اپیل کرتے ہوئے کہا کہ گٹکہ استعمال کرنے پر جو خرچ کرتے ہیں وہ رقم اگر اپنے بچوں کی تعلی، صحت اور خوشحالی پر خرچ کی جائے تو ایک تعلیم یافتہ اور صحتمند معاشرہ قائم کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹھٹھہ میں میڈیکل کالج کے قیام کیلئے اعلی حکام کو تجویز ارسال کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈی سی یا ایس ایس پی اکیلے کچھ بھی نہیں کر سکتے جب تک یہاں کے باشعور لوگ تعاون نہیں کریں گے۔ اس کیلئے ہم سب کو ملکر تعلیم، صحت، صفائی ستھرائی اور ضلع کی ترقی سمیت دیگر سماجی برائیوں کے خلاف آگے آنا ہوگا اور اپنے شہر کی مالکی کرنے پڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ جب تک ہم اپنا رویہ تبدیل نہیں کریں گے تب تک تبدیلی نہیں آ سکتی۔ ڈپٹی کمشنر نے بریفنگ دیتے ہوغے بتایا کہ ضلع میں 750 بند اسکول کھلوانے کیلئے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے کوششیں کی جا رہی ہیں اور اس ضمن میں عوام، سول سوسائٹی باالخصوص میڈیا کے نمائندوں کو اپنا بھرپور کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہو نے کہا کہ اب تک 32 بند اسکول کھلواکر ان کو فعال بنایا گیا ہے جبکہ باقی بند اسکول بھی جلد کھلوا کر ان کو بھی فعال بنایا جائے گا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اجلاس میں جن بھی مسائل پر غور و خوس اور قول و قرار کئے گئے ہیں ان کو عملی جامہ پہنانے کیلئے سب کو ملکر اپنا بھرپور کردار ادا کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی جائے گی۔ اس موقع پر ایم پی اے سید ریاض شاہ شیرازی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹھٹھہ ضلع میں پینے کا صاف پانی، ڈرینیج، صحت، تعلیم، میڈیکل کالج کے قیام اور دیگر مسائل کی بہتری کیلئے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر تعلیم بہتر ہوگی تو یہاں گٹکہ، مین پڑی اور دیگر سماجی برائیوں کا از خود خاتمہ ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے نجی واٹر پارکس جوکہ سالانہ کروڑوں روپے کما رہے ہیں لیکن اگر کینجھر جھیل پر ایک اچھا پروجیکپ تشکیل دیا جائے اور وہاں سوئمنگ پول، پارکس و دیگر سیاحتی سہولیات فراہم کی جائیں تو خوبصورتی کے ساتھ ساتھ بہتر آمدنی کا ذریعہ بھی ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے خوبصورت پہاڑ غیر قانونی لیز کئے گئے ہیں اس میں نکنے والے قیمتی پتھروں سے اس ضلع کو بہت کم رائلٹی ملتی ہے جبکہ وہ لیز کینسل کرکے پہاڑوں کی خوبصورتی کو بچانے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے اجلاس میں موجود اعلی افسران کو اپنے بھرپور تعاون کی یقین دہانی بھی کروائی۔ قبل ازیں ایس ایس پی ٹھٹھہ شبیر احمد سیٹھار نے اجلاس کو آگہی دیتے ہوئے محکمہ پولیس کی جانب سے ضلع میں امن امان، گٹکہ، مین پڑی، ٹھرا اور دیگر سماجی برائیوں کے خلاف کارکردگی کے متعلق تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ امن و امان میں خلل ڈالنے والوں اور گٹکہ، مین پڑی اور دیگر منشیات تیار کرنے اور بیجنے والے کتنے ہی با اثر کیوں نہ ہوں انہیں کسی بھی صورت میں بخش نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ گٹکہ کے باعث موت کا شکار ہونے والے لوگوں کی ایف آئی آر درج کرکے فیکٹری مالکان اور بیچنے والوں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا جائے گا۔ ٹھٹھہ کو خوبصورت اور ترقی یافتہ بنانے کیلئے اجلاس بلانے کا اہم کردار ڈاکٹر مشہور عالم شاہ نے کہا کہ ٹھٹھہ ایک نغے دور میں شامل ہو رہا ہے یہی وجہ ہے کہ ٹھٹھہ کی ترقی کیلئے آج ایک پروگرام تشکیل دیا جا رہا ہے اس کیلئے یہاں کے عوام باالخصوص باشعور، معززین، تاجر برادری، تمام اداروں کے افسران اور ضلعی انتظامیہ کو اکٹھا کیا گیا ہے تاکہ اس شہر کے مسائل حل کئے جا سکیں اور وہی تعلیمی ادارے اور یونیورسٹیاں قاغم کرکے اس شہر کو مثالی بنایا جا سکے۔ قبل ازیں ڈاکٹر شام لال، پروفیسر ڈاکٹر سرفراز حسین سولنگی، ڈی ایچ او ڈاکٹر خدا بخش میمن، یاسمین لاری، آپا ممتاز، قادر بخش بھٹو، ادا محمد میمن، ممتاز علی میمن، سلطان ہاشمانی و دیگر نے اپنے محکموں کی کارکردگی، ضروریات اور ٹھٹھہ شہر کے مسائل کے متعغلق اجلاس کو تفصیلی بریفنگ دی۔ اس موقع پر ضلع کے تمام محکموں کے افسران، سیاسی و سماجی، سول سوسائٹی اور میڈیا کے نمائندوں کے علاوہ وکلاء اور تاجر بداردری اور معززین بھی موجود تھے۔

43 COMMENTS

  1. Oh my goodness! a tremendous article dude. Thank you However I’m experiencing problem with ur rss . Don’t know why Unable to subscribe to it. Is there anybody getting similar rss drawback? Anybody who is aware of kindly respond. Thnkx

  2. I know top Blog professionals would really like your blog. You have a good head on your shoulders. You always know just what to say. I truly appreciate this page. Neat post.

  3. Youre so cool! I dont suppose Ive read anything like this before. So nice to find any individual with some authentic ideas on this subject. realy thank you for beginning this up. this website is something that is wanted on the internet, someone with a little originality. useful job for bringing one thing new to the internet!

  4. Oh my goodness! a tremendous article dude. Thank you However I’m experiencing problem with ur rss . Don’t know why Unable to subscribe to it. Is there anybody getting similar rss drawback? Anybody who is aware of kindly respond. Thnkx

  5. I was suggested this website by my cousin. I’m not sure whether this post is written by him as nobody else know such detailed about my problem. You’re amazing! Thanks!

  6. qdxgnnx,Thanks for ones marvelous posting! I actually enjoyed reading it, you will be a great author.I will always bookmark your blog and will yxzlxe,come back from now on. I want to encourage that you continue your great writing, have a nice afternoon!

  7. the “Bred” Air Jordan 4s have gone on to become one of Jordan Brand’s most iconic sneakers of all time. Now, they’re set to return in April, complete with an original detail that was absent when they last released in 2012: original Nike Air branding on the heel, a mark that was last spotted on the 1999 retro.

  8. Saban first revealed the hip injury at Alabama’s spring game last week, and said it started bothering him at the beginning of spring practice. The injury lingered throughout the spring, slowly getting worse.

  9. zdupngo,Thanks for ones marvelous posting! I actually enjoyed reading it, you will be a great author.I will always bookmark your blog and will ncpxmcqoa,come back from now on. I want to encourage that you continue your great writing, have a nice afternoon!

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here