احساس راشن پروگرام کی رجسٹریشن پیر سے شروع ہوگئی

 
0
132

اسلام آباد 05 نومبر 2021 (ٹی این ایس): وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے تخفیف غربت اور سماجی تحفظ ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے وزیر اعظم کےاعلان کردہ احساس راشن پروگرام کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ وہ غریب خاندان جن کی ماہانہ آمدنی 31 ہزار روپے سے کم ہے ان کی رجسٹریشن پیر سے شروع کردی جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ اس مقصد کے لیے ایک ویب پورٹل بنایا جائے گا اور مستحق خاندان روز مرہ استعمال کی اشیا مثلاً آٹا، دالیں، تیل، چینی وغیرہ یوٹیلیٹی اسٹور اور پرچون کی دکانوں سے سستے داموں خرید سکیں گے۔

انہوں نے کہا کہ گلی محلوں میں کھلی چھوٹی پرچون کی دکانیں بھی اگر رجسٹرڈ اور اس نظام میں مجاز ہوئیں تو وہ بھی یہ سہولت فراہم کر سکیں گی۔

ڈاکٹر ثانیہ نشتر کا کہا کہ احساس سماجی اقتصادی رجسٹری سروے مکمل ہوچکا جسے اس غریب نواز پروگرام کے سلسلے میں مستحق خاندانوں کی نشاندہی کے لیے استعمال کیا جائے گا۔

انہوں نے بتایا کہ رجسٹریشن کا عمل 3 سے 4 ہفتوں میں مکمل ہوجائے گا، اس سے مستفید ہونے کے لیے قومی شناخت کارڈ پر رجسٹرڈ فون نمبر درکار ہوگا جو اشیا کی خریداری سے قبل خاص اسٹورز پر دیا جائے جس کے بعد شہری سستے داموں اشیا حاصل کرسکیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ 2کروڑ رجسٹرڈ خاندانوں میں ہر ماہ ایک ہزار روپے کی سبسڈی فراہم کی جائے گی، یہ رقم ایک ماہ استعمال نہ ہونے پر آئندہ ماہ بھی استعمال کی جاسکے گی۔

انہوں نے بتایا کہ سبسڈی کی رقم میں مالکان کے لیے مراعاتی طور پر مناسب منافع بھی شامل ہوگا تا کہ وہ جتنے زیادہ ممکن ہو اتنے غریبوں کو بخوشی سستی اشیائے خورونوش فراہم کرسکیں۔

احساس پروگرام کے اعداد و شمار کے مطابق ملک کی آبادی کا 60 فیصد حصہ اس سے مستفید ہوسکے گا۔ ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ اس پروگرام کے تحت ایک کھرب 20 ارب روپے کی سبسڈی فراہم کی جارہی ہے، جس میں 65 فیصد رقم صوبے جبکہ 35 فیصد رقم وفاقی حکومت ادا کرے گی۔