پشاور(ٹی این ایس )احسان کابدلہ احسان کے علاوہ کچھ اورنہیں ہوسکتا، آرمی چیف کا افغان حکومت کو واضح پیغام

 
0
161

پاک فوج کے سپہ سالار جنرل عاصم منیر نے کہا ہے کہ اسلام سلامتی اورامن کادین ،یہ خوارج کون سی شریعت لاناچاہتے ہیں؟کسی بھی گروہ یاجتھے سے بات نہیں کی جائیگی، جنہوں نے دین کودہشتگردی کی بھینٹ چڑھایاانہیں جواب دیناہوگا۔چیف آف آرمی اسٹاف جنرل عاصم منیر نے پشاورمیں خیبرپختونخواکے مشران ،عمائدین اور نمائندوں کے گرینڈ جرگے میں خصوصی شرکت کی۔اورقلعہ بالا حصار میں یاد گار شہدا پر حاضری اور پھولوں کی چڑھائے۔

تاریخی گرینڈجرگے سے خطاب کرتے ہوئے جنرل نے کہا کہ ہم اللہ کے راستے میں جہادکر رہیہیں اورکامیابی ہماری ہوگی،میں اورمیری بہادرفوج دہشتگردی کیخلاف جنگ میں خون کیآخری قطرے تک لڑیں گے،پاکستانی آئین میں حاکمیت اللہ کی ذات کی ہے،یہ خوارج کون سی شریعت لاناچاہتے ہیں؟۔

افغان حکومت کومخاطب کرتے ہو ئے آرمی چیف نیکہااحسان کابدلہ احسان کے علاوہ کچھ اورہوسکتاہے ؟جنہوں نیدین کودہشتگردی کی بھینٹ چڑھایاانہیں جواب دیناہوگا،اسلام سلامتی اورامن کادین ہے ،کسی بھی گروہ یاجتھے سے بات نہیں کی جائیگی،مذاکرات ہوئے توصرف پاکستان اورعبوری حکومت کیدرمیان ہوں گے۔

آررمی چیف نے کہا کہ افغان شہریوں کے ملوث ہونے کو علاقائی امن و استحکام کیلئے خطرہ اور دوحہ امن معاہدے کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ جو لوگ امن کو برباد کرنا چاہتے ہیں وہ ہم میں سے نہیں ہیں۔ افغان مہاجرین کو پاکستان میں پاکستان کے قوانین کے مطابق رہنا ہو گا۔

جنرعاصم منیرنے کہا کہ پاکستانی فوج شہداکی فوج ہے،جس کانعرہ ہے ا یمان،تقوی،جہادفی سبیل اللہ،جولوگ امن بربادکرناچاہتے ہیں وہ ہم میں سے نہیں ،سیکیورٹی کے تمام اداریاور پاکستان کی عوام ایک ہیں،پاکستان،ریاست مدینہ کے بعدکلمے پربننے والی دوسری ریاست ہے، دنیا کی کوئی طاقت پاکستان کاکچھ نہیں کرسکتی۔