راولپنڈی(ٹی این ایس) راولپنڈی ڈویلپمنٹ اتھارٹیٹاسک فورس کا روات میں 12 غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کے خلاف گرینڈ آپریشن۔

 
0
138

راولپنڈی ڈویلپمنٹ اتھارٹی
غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کے خلاف ٹاسک فورس کی کارروائیاں جاری ہیں۔
ٹاسک فورس نے 12 غیر قانونی سوسائٹیوں کے دفاتر، مرکزی داخلی راستوں/گیٹس، باؤنڈری والز، غیر قانونی کٹنگ/پلاٹنگ، سب ڈویژن، ڈیوائیڈرز اور روڈ انفراسٹرکچر کو مسمارکر دیا۔
راولپنڈی: کمشنر راولپنڈی ڈویژن لیاقت علی چٹھہ کی ہدایت پر چیئرمین ٹاسک فورس و ڈائریکٹر جنرل آر ڈی اے محمد سیف انور جپہ کی سربرا ہی میں قائم ٹاسک فورس نے موضع ابن چک، بگا شیخان، میرا مارتھا، چک بیلی خان، تخت پری، رتیال اور بنیاں جی ٹی روڈ، روات راولپنڈی میں بارہ غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں جن میں نیشنل پولیس فاؤنڈیشن، پاکستان اٹامک انرجی کمیشن، پاکستانی گورنمنٹ ایمپلائز ہاؤسنگ سکیم، سنچری ٹاؤن، تقوی ٹاؤن، گرین انکلیو، پی اے آر سی ہاؤسنگ سکیم، ایمپل لیونگ و نشانِ مصطفیٰ، پاک پی ڈبلیو ڈی ہاؤسنگ سکیم، کنٹری سائیڈ فارم ہاؤس، رائزر مارکیٹنگ اور شاہین گارڈن شامل ہیں کے دفاتر، مرکزی داخلی راستوں و مین گیٹس، باؤنڈری والز، غیر قانونی کٹنگ و پلاٹنگ، سب ڈویژن، ڈیوائیڈرز اور روڈ انفراسٹرکچر کو مسمارو سربمہر کر دیا ہے۔ ٹاسک فورس کے سربراہ و ڈی جی آر ڈی اے نے کہا عوام الناس کی شکایات پرغیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کی دھوکہ دہی، شہریوں کو ورغلا کر لوٹ مار اور جعلسازی کو روکنے کے کیے گرینڈ آپریشن کیا گیا جس کا تسلسل قائم رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی جانب سے غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کے مالکان پر ناجائز قبضوں کی شکایات بھی موصول ہوتی ہیں اور اسلحہ کے زور پر قبضہ کرواتے ہیں ان کے خلاف سخت کاروائی جاری رہے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کے خلاف آپریشن جاری رہے گا۔ سربراہ ٹاسک فورس و ڈی جی آر ڈی اے محمد سیف انور جپہ نے کہا کہ جن ہاؤسنگ سکیموں کے مالکان نے قانونی کاغذات پورے کیے ہیں انہیں پراسس دیا ہے اور آرڈی اے وقتاً فوقتاً عوام الناس کے معلومات کے لیے پریس ریلیز جاری کرتا رہتا ہے کہ وہ غیرقانونی ہاؤسنگ سکیموں میں اپنے سرمایہ نہ لگائیں اور آرڈی اے ویب سائٹ www.rda.gop.pk پر دیکھیں اور ہدایت کی جاتی ہے کہ صرف منظور شدہ ہاءوسنگ سکیموں سے خریدو فروخت کریں۔ حکام کے مطابق اس سے قبل مذکورہ غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کے مالکان اور سپانسرز کو نوٹس جاری کیے گئے تھے جن میں جاوید اقبال خان، مرزا نسیم الحق، عطا الرحمان بخاری، شہزاد احمد، قاضی نوید احمد، محمد عمران کھوکھر، جاوید احمد بٹ، حماد جمیل، اعجاز جہانگیر، ظہور اکبر اور سردار شعیب شاہین کے خلاف غیر قانونی اشتہارات، بکنگ اور ترقی کو روکنے کے لیے ایف آئی آر بھی درج کرائی گئیں۔ تھیں۔ ان جائیدادوں کے مالکان قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غیر قانونی ہاؤسنگ سکیموں کے بکنگ آفس چلا رہے تھے۔ ٹاسک فورس میں ڈپٹی ڈائریکٹر پلاننگ سمیع اللہ نیازی، اسسٹنٹ ڈائریکٹر بلڈنگ کنٹرول آر ڈی اے، اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ آر ڈی اے، اسسٹنٹ ڈائریکٹر پلاننگ آر ڈی اے، ڈی ایس پی روات مسٹر نعمان، تھانہ روات راولپنڈی کے ایس ایچ او، سکیم انسپکٹرز آر ڈی اے، ضلع کونسل کے انسپکٹر، ضلعی انتظامیہ کے نمائندے اور دیگر نے ٹیم کے ساتھ مل کر گرینڈ آپریشن کیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔